Chand Tuffay Ik Gulaab Aur Khatt by Arslan Hussain

Ghazal By Arslan Hussain

” اب وہ میری نہیں, تمہاری ہے “

 

خون ریزی ہے، اشکباری ہے
خوابِ دیدہ میں بے قراری ہے

 

ہجر ٹہرا ہوا ہے برسوں سے
شدتِ کُرب اب بھی تاری ہے

 

خلوتِ زیست سے رُوبَرو ہو کر
وصل لمحوں پر بحث جاری ہے

 

چند تحفے اِک گلاب اور خط
یہ رفاقت بھی کتنی پیاری ہے

 

آج بھی وہ ذھن نشیں ہے مرے
ریت پر اُسکی شبی اُتاری ہے

 

دل کو کیسے یقین دلاؤں حسینؔ
اب وہ میری نہیں, تمہاری ہے

 

ارسلان حسینؔ

3 Replies to “Chand Tuffay Ik Gulaab Aur Khatt by Arslan Hussain

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *